Government College University Faisalabad

نوجوانان پاکستان سیمینار

Posted on: 23 Sep 2019

ہمیں اس راستے پر چلنا ہوگا جو قائداعظم نے متعین کیاتھا نوجوانوں کو اس بات کا علم ہونا چاہیے کہ پاکستان کے اغراض و مقاصد کیا ہیں قائداعظم تو انگریزوں سے آزادی چاہتے تھے لیکن ہندووں نے ہمیں مجبور کیا کہ ہم آزاد ہند کی بجائے مسلمانوں کیلئے الگ خطے کا مطالبہ کریں۔ بلا تفریق مذہب، رنگ و نسل ہم سب پاکستانی ہیں ہمارا اختلاف صرف بات یا مذاکرات تک ہونا چاہیے شدت پسندی کسی مسئلے کا حل نہیں ہمیں اپنے رویوں کو، کردار کو مثبت بنانا ہے ان خیالات کا اظہارگورنمنٹ کالج یونیورسٹی میں ”نوجوانان پاکستان سیمینار“سے صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن یاسر ہمایوں نے کیاجس کی صدارت وائس چانسلر ڈاکٹر شاہد کمال نے کی اس سیمینار میں دیگر مہمانان میں صوبائی وزیر مذہبی امور پیر سید سعید الحسن ، ایم این اے رائے مرتضی اقبال، ڈی جی آئی آئی یو آئی ڈاکٹر ضیاء الحق، ڈائریکٹر کرسچیئن سٹڈی سنٹر جینیفرجیگ جیون،پروفیسر نذیر حسین، ایڈیشنل ڈی جی قائداعظم اکیڈمی احمد خاور شہزاد، ڈاکٹر اسماء آفتاب، ڈائریکٹر یوتھ امپیکٹ صائمہ شاہدشامل ہیں۔وائس چانسلر ڈاکٹر شاہد کمال نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور نوجوانوں کی اصلاح اور تربیت پر بات کی۔سیمینار سے صوبائی وزیر مذہبی امور پیر سید سعید الحسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات انتہائی دانشمندانہ رویے کا تقاضہ کرتے ہیں ایک طرف کشمیر میں بھارتی مظالم دوسری طرف دہشتگردی کا خطرہ ہے دشمن ہمیں فرقہ واریت میں ڈال کر ہمیں شکست دینا چاہتا ہے ہمیں گروہی، صوبائی اور لسانی تقسیم کو ختم کرکے سچے پاکستانی بننا ہے ہمیں اس ملت کی پاسبانی کیلئے ایک ہونا ہے۔ سیمینار کے آخر میں صوبائی وزیر مذہبی امور پیر سید سعید الحسن نے پاکستان کی سلامتی اور کشمیر کی آزادی کے لئے دُعا کرائی۔اس سے قبل یونیورسٹی کے طلبہ نے ملی نغمہ پیش کیا۔ صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن یاسر ہمایوں نے مہمانوں اور منتظمین میں شیلڈز تقسیم کیں۔


Search this website